Download (8)

370 کے خاتمے کے بعدکشمیر سیاحت کامرکز تعمیروترقی کے نئے دورکاآغاز چین بنگلہ دیش پاکستان کے ساتھ لگنے والی سرحدوں پرتناؤ کاماحول بھرقرار تاہم معاملہ حل کرنے کی کوششیں بھی جاری /وزیرخارجہ

سرینگر //370-35Aکے خاتمے کے بعد جموں وکشمیر میں سیاحت کوفروغ ملنے تعمیروترقی کے ایک نئے دور کاآغاز ہونے او رلوگ مطمئن ہونے کا ارادہ ظاہر کرتے ہوئے وزیرخارجہ نے کہاکہ چین پاکستان بنگلہ دیش کے ساتھ لگنے والی سرحدوں پرکشیدگی اور تناؤ کاماحول اگرچہ بھرقرار ہے تاہم سرحدی معاملا ت کوحل کرنے کے لئے اقدامات بھی اٹھائے جارہے ہیں ۔بھارت کسی بھی چلینج کامقابلہ کرنے کی صلاحیت رکھتاہے او رکسی کے وہم وگمان میں یہ نہیںہونا چاہئے کہ بھارت خاموش تماشائی بناہوا ہے۔ چین بنگلہ دیش اور پاکستان کے ساتھ لگنے والی سرحدوں پرتناؤ اور کشیدگی بھر قرار ہونے کا عندیہ دیتے ہوئے۔ وزیرخارجہ ڈاکٹرایس جے شنکر نے کہاکہ بنگلہ دیش کے ساتھ سرحدوں پرصورتحال کو پرُامن بنانے دراندازی کوروکنے ا ور سرحدوں کی فنسنگ کاکام وقت وقت پر جاری رہتا ہے اور بنگلہ دیش اوربھارت سرحدوں کی نقل وحرکت پر کڑی نظررکھے ہوئے ہیں۔وزیرخارجہ نے کہا مشرقی لداخ میں چین کے ساتھ سرحدوںکاتعین کرنے کے لئے سیاسی سفارتی اور ملٹری سطح پر بات چیت کاسلسلہ جاری ہے اور سرحدوں کاتعین کرنے کے لئے ہم پرُاُمید ہیں او ردونوں ممالک با ت چیت کے زریعے اس مسئلے کوحل کرنے میں رضامندی بھی ظاہرکرتے ہیں ۔وزیرخارجہ نے چینی لبریشن آرمی کو قوائدوضوابط کے منافی قراردیتے ہوئے کہا چین کے ساتھ مزاکرا ت کے دوران ان پریہ واضح کیاجاتاہے کہ بھارت قوائدضوابط کی خلاف ورزی کوناقابل برداشت سمجھ رہاہے او راس طرح کے اقدامات اٹھانے سے گریز کیاجاناچاہئے۔ انہوں نے کہاکہ ہم اپنی یہ بات واضح کرچکے ہیں کہ فاسٹ کم او رفاسٹ گوکے طریقہ کار کواپنانا چاہئے ۔پاکستان کے ساتھ لگنے والی سرحدوں کے بارے میں انہوں نے کہا اگرچہ 2020سے بھارت پاکستان کے مابین حدمتارکہ او ربین الا قوامی کنٹرو ل لائن پرنا جنگ معاہدے پرعمل ہورہی ہے تاہم عسکریت پسندوں کی دراندازی کاسلسلہ جاری ہے جب تک نہ ہمسایہ ملک دہشت گردی کے ڈھانچے کومنہدم کردے گا۔ تعلقات میںگرماہٹ آنے کی وجہ نہیں ہے ۔انہوںنے کہاکہ ہم پاکستان پریہ واضح کردیناچاہئے کہ دہشت گردی کے ڈھانچے کومنہدم کرنے او راپنی سرزمین بھارت مخالف سرگرمیوں کے لئے استعمال کرنے کی اجازت نہ دے ۔پاکستان کے ساتھ تعلقات کومعمول پرلانے میں بھارت کووقت نہیں لگے گا ۔370کے خاتمے کوملک کے آئین کے عین مطابق قرار دیتے ہوئے وزیر خارجہ نے کہاکہ سپریم کورٹ آف انڈ یا نے اس فیصلے کی تصدیق کی ہے خصوصی درجے کے خاتمے کے بعد جموں وکشمیر ٹور ازم کامرکز بناہوا ہے نئے تعمیروترقی کے دور کاآغازا ہوچکاہے اورلوگ مرکزی حکومت کے فیصلے سے مطمئن ہیں ۔انہوںنے کہا کسی بھی ملک کوہمارے اندرونی معاملات میں مداخلت کی اجازت نہیں ہے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں