20240206 175634

یوم شہادت امام موسیٰ کاظم ؑ،مرکزی امام باڑہ بڈگام میں پروقار مجلس عزاء:

یہ مجالس عزا ہر دور کے ظالم و جابر حکمرانوں کے خلاف احتجاج ہیں۔۔۔۔ آغا حسن

بڈگام //سلسہ امامت کی ساتویں کڑی حضرت امام موسیٰ کاظم ؑ کے یوم شہادت کی موقع پر جموں و کشمیر انجمن شرعی شیعیان کے اہتمام سے مرکزی امام باڑہ بڈگام میں ایک پروقار مجلس عزاء کا انعقاد ہوا جہاں وادی کے اطراف و اکناف سے آئے ہزاروں کی تعداد میں عقیدت مندوں نے شرکت کرکے امام عالیٰ مقامؑ کے تئیں اپنی والہانہ عقیدت کا اظہار کیاموقع کی مناسبت سے تنظیم کے مرکزی ذاکرین نے مرثیہ خوانی کرکے لوگوں کو امام کے مظلومانہ زندگی سے آگاہ کیا اس موقع پر انجمن شرعی شیعیان کے صدر حجۃ الاسلام والمسلمین آغا سید حسن الموسوی الصفوی نے عقیدت مندوں کے جمع غفیر سے خطاب کرتے ہوئے حضرت امام موسیٰ کاظم ؑ کی سیرت طیبہ اور کردار و عمل کے مختلف گوشوں کی وضاحت کی۔آغا صاحب نے کہا کہ امام موسویٰ کاظم ؑ کے دور امامت میں اسلامی سلطنت کا دائرہ کافی وسیع ہوچکا تھا تاہم خلافت اسلامیہ مکمل طور پر ملوکیت میں تبدیل ہو چکی تھی حکمران طبقہ اپنے سیاسی مفادات اور حکمرانی کے تحفظ کے لئے قرآن و سنت سے رو گردانی کی راہ اختیار کرتے چلے جا رہے تھے خانوادہ نبوت ؐ کی محترم اور معزز ترین علمی شخصیت اور وارث علم نبوت ؐ کی حیثیت سے وقت کے حکمران اپنے سیاسی عزائم کی راہ میں امام عالیٰ مقامؑ کی ذات قدسیہ کو سب سے بڑی رکاوٹ تصور کررہے تھے اس لئے امام عالیٰ مقامؑ کو17سال تک پابند سلاسل کرکے قید خانے میں ہی درجہ شہادت پر پہنچایا گیا۔آغا صاحب نے کہا کہ اکثر ائمہ معصومینؑ کی دلدوز شہادتیں سے ہمیں سبق ملتا ہے کہ ہمیں ہر زمانے کے ظالم کے خلاف اپنی آواز بلند کرنی چاہئے آج فلسطین میں ظلم کی جو داستان رقم ہے رب العزت عزت اس باب الحوائج کے صدقے مظلومین کو ظالمانہ چنگل سے آزاد کرے۔۔۔ آمین

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں