Download (9)

وزیر داخلہ امیت شاہ نے 2جنوری کو نئی دہلی میں جموں و کشمیر پر اعلیٰ سطحی میٹنگ بلائی

سیکورٹی، ترقیاتی کاموں کا جائزہ لیا جائے گا۔ایل جی، اعلیٰ حکام شرکت کریں گے۔

سرینگر //مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ نے 2جنوری کو نئی دہلی میں جموں و کشمیر میں ترقیاتی کاموں اور سیکورٹی صورتحال کا جائزہ لینے کے لئے ایک اعلیٰ سطحی میٹنگ بلائی ہے، خاص طور پر جڑواں سرحدی اضلاع راجوری اور پونچھ کے حوالے سے بھی بات چیت ہونے کا امکان ہے ۔جس دوران علاقے کی سیکورٹی صورتحال کا جائزہ بھی لینے کا ا مکان ہے۔کشمیر نیوز سروس ( کے این ایس ) کے مطابق وزیر دفاع راج ناتھ سنگھ نے 27 دسمبر کو راجوری کا دورہ کیا اور دونوں اضلاع کی صورتحال کا جائزہ لینے کے لیے اعلیٰ سطحی میٹنگ کی صدارت کی۔لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا، مرکزی داخلہ سکریٹری اے کے بھلا، جموں و کشمیر سے نمٹنے والے وزرات داخلہ کے اعلیٰ افسران، نیم فوجی دستوں اور انٹیلی جنس ایجنسیوں کے سربراہان، چیف سکریٹری اتل ڈلو، فائنانشل کمشنر اور ایڈیشنل چیف سکریٹری ہوم آر کے گوئل، ڈائرکٹر جنرل آف پولیس (ڈی جی پی)۔ آر آر سوین اور ایڈیشنل ڈی جی پی لاء اینڈ آرڈر وجے کمار کی میٹنگ میں دوسروں کے ساتھ شرکت متوقع ہے۔عہدیداروں نے بتایا کہ دو سیشن ہو سکتے ہیں – ایک ترقیاتی کاموں سے متعلق اور دوسرا خاص طور پر امن و امان کی صورتحال سے متعلق، خاص طور پر راجوری اور پونچھ اضلاع میں جہاں اس سال چار واقعات میں 19 فوجی شہید ہوئے تھے۔ تاہم، تقریباً 30دہشت گردوں کو بھی سیکورٹی فورسز نے لائن آف کنٹرول (ایل او سی) کے ساتھ ساتھ اندرونی علاقوں سے بھی ہلاک کیا ہے۔یہ 2024 میں مرکزی وزیر داخلہ کے ذریعہ جموں و کشمیر میں ترقیاتی کاموں اور سیکورٹی کی صورتحال کا پہلا بڑا جائزہ ہوگا جو سال کے لئے ترقی اور انسداد عسکریت پسندی کی کارروائیوں کے ایجنڈے کو اچھی طرح سے ترتیب دے سکتا ہے۔میٹنگ میں جہاں پورے جموں و کشمیر کی سیکورٹی صورتحال کا جائزہ لیا جائے گا، وہیں راجوری اور پونچھ اضلاع میں اس سال دہشت گردانہ حملوں میں اضافے اور پیر پنجال کے پہاڑوں، جنگلات اور دیگر علاقوں میں چھپے ہوئے 30 سے زائد دہشت گردوں کو ختم کرنے کے لیے ضروری اقدامات کا بھی جائزہ لیا جائے گا۔ خطرے سے دوچار علاقے، اجلاس میں نمایاں طور پر سامنے آئیں گے،” حکام نے کہا۔اطلاعات ہیں کہ سیکورٹی فورسز دہشت گردوں کو بے اثر کرنے کے لیے مشترکہ طور پر بڑے پیمانے پر آپریشن کر سکتی ہیں۔ پہلے سے ہی، اس طرح کی بہت سی کارروائیاں جاری ہیں اور ان میں شدت آنے کا امکان ہے کیونکہ مزید فوجی پہلے ہی راجوری اور پونچھ پہنچ چکے ہیں۔۱۲ دسمبر کو پونچھ ضلع کے سورنکوٹ علاقے میں ڈیرہ کی گلی میں ہونے والے دہشت گردانہ حملے کے بعد جس میں چار فوجی شہید ہوئے تھے اور اگلے دن تین شہری پراسرار طور پر ہلاک ہوگئے تھے، وزیر دفاع راج ناتھ سنگھ نے 27دسمبر کو راجوری کا دورہ کیا اور لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا اور اعلیٰ حکام سے صورتحال پر تبادلہ خیال کیا۔ آرمی کمانڈرز۔حکام کے مطابق، جموں و کشمیر میں جاری ترقیاتی کام بشمول مرکزی اسپانسر شدہ اسکیموں، وزیر اعظم کے ترقیاتی پیکج (پی ایم ڈی پی) وغیرہ کا بھی وزیر داخلہ کی میٹنگ میں جائزہ لیا جائے گا۔”جموں و کشمیر میں اگست 2019 کے بعد کئی ترقیاتی کام زیر تکمیل ہیں جن میں مرکزی حکومت کی طرف سے فنڈز کے علاوہ مرکزی زیر انتظام حکومت کے ہاتھ میں شروع کیے گئے منصوبے شامل ہیں۔ یہ سب جائزہ لینے کے لیے سامنے آئیں گے،‘‘ عہدیداروں نے کہا، انہوں نے مزید کہا کہ منصوبے اب اپنی تکمیل کے لیے مقرر کردہ ٹائم لائنز کو پورا کر رہے ہیں۔گزشتہ روز ہی لیفٹیننٹ گورنر نے کہا تھا کہ اگلے سال کے شروع تک کشمیر کو باقی دنیا سے ریل کے ذریعے جوڑ دیا جائے گا۔ وزیر اعظم نریندر مودی نے کل ایودھیا سے دہلی-کٹرا روٹ پر وندے بھارت ٹرین کو ہری جھنڈی دکھا کر روانہ کیا، جو اس ٹریک پر اس طرح کی دوسری ٹرین ہے۔ وادی ریل لنک مکمل ہونے کے بعد تیسرا وندے بھارت جموں-سری نگر-بارہمولہ روٹ پر چلے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں