Download (12)

نیا بھارت کسی بھی قیمت پر سمندری قزاقی، اسمگلنگ کو برداشت نہیں کرے گا

عوام تب چین سے سوتے ہیں جبکہ ہماری مسلح افواج سرحدوں پر راتوں کو جاگتے ہیں
ملک کی حفاظت میں فوج کے تینوں شاخوں کا رول کلیدی ، ہمیں ان پر فخر اور ناز ہے / راجناتھ سنگھ

سرینگر // نیا بھارت کسی بھی قیمت پر سمندری قزاقی، اسمگلنگ کو برداشت نہیں کرے گا کا اعلان کرتے ہوئے وزیر دفاع راجناتھ سنگھ نے کہا کہ ملک کی حفاظت میں فوج کے تینوں شاخوں کا رول کلیدی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ فوج نے تمام محاذوں پر ملک کو محفوظ رکھا اور ہمار ا سر فخر سے اونچا کیا ۔ راجناتھ سنگھ نے ایک بار پھر زور دیا کہ ملک کے عوام تب چین کی نیند سوتے ہیں جب ہمارے جوان ملک کی حفاظت کیلئے کھڑا ہوتے ہیں ۔ سی این آئی کے مطابق وشاکھاپٹنم میں ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیر دفاع راجناتھ سنگھ نے کہا کہ بحری قزاقی اور اسمگلنگ کو کسی بھی حالت میں برداشت نہیں کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ آج بحریہ کی اتنی طاقت اور ثابت قدمی ہے کہ جب بحر ہند اور ہند بحرالکاہل خطے کی سلامتی کو یقینی بنانے کی بات آتی ہے تو وہ پہلی جواب دہندہ ہے۔جب عالمی تجارت کی بات آتی ہے تو بحر ہند کا خطہ ایک ہاٹ سپاٹ کے طور پر شمار کیا جاتا ہے۔ بہت سے چوک پوائنٹس جیسے خلیج عدن اور گلف آف گنی، بحر ہند میں ہیں۔ بین الاقوامی تجارت کا ایک بڑا حجم یہاں ہوتا ہے۔ ان چوک پوائنٹس کو متعدد خطرات کا سامنا ہے، جن میں سب سے بڑا بحری قزاقوں سے ہے۔ راجناتھ نے کہا’’ہم چاہتے ہیں کہ جہاز رانی، تجارت اور تجارت کی آزادی کو ہر قیمت پر برقرار رکھا جائے‘‘۔ مختلف ممالک کے درمیان بلا روک ٹوک اور بلا تعطل تجارت ہونی چاہیے۔ ہماری بحریہ کی بڑھتی ہوئی طاقت اور سمندری اثر و رسوخ اس خطے میں منشیات اور انسانی اسمگلنگ کو روکنے کی طرف جا رہا ہے۔اس کے ساتھ ہی وزیر دفاع سنگھ نے کہا’’اگر میں اپنی بحری طاقت کے بارے میں بات کروں تو ہندوستانی بحریہ اتنی مضبوط ہو گئی ہے کہ ہم بحر ہند اور اس کے علاقے میں سیکورٹی کے معاملے میں سب سے پہلے جواب دہندہ بن گئے ہیں‘‘۔وزیر دفاع راجناتھ سنگھ نے کہا کہ ملک کی حفاظت میں فوج کے تینوں شاخوں کا رول کلیدی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ فوج نے تمام محاذوں پر ملک کو محفوظ رکھا اور ہمار ا سر فخر سے اونچا کیا ۔ راجناتھ سنگھ نے ایک بار پھر زور دیا کہ ملک کے عوام تب چین کی نیند سوتے ہیں جب ہمارے جوان ملک کی حفاظت کیلئے کھڑا ہوتے ہیں ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں