Images (1)

’’میں تیسری مدت اقتدار کے مزے لینے کیلئے نہیں بلکہ کام اور قوم کی خدمات کیلئے چاہتا ہوں ‘‘

ملک کو گھوٹالوں اور دہشت گردحملوں سے نجات دلائی،غریب اور متوسط طبقے کے معیار زندگی کو بہتر بنانے کی کوششیں کیں
ملک کو اب بڑے خواب دیکھنا ہوں گے ، سال 2047 تک ہندوستان کو ایک ترقی یافتہ ملک بنانے کیلئے پُر عزم / وزیر اعظم مودی

سرینگر // ’’میں تیسری مدت اقتدار کے مزے لینے کیلئے نہیں بلکہ ملک کیلئے کام کرنے کیلئے چاہتا ہوں ‘‘ کا اعلان کرتے ہوئے وزیر اعظم نریندر مودی نے کہا کہ کروڑوں خواتین، غریبوں اور نوجوانوں کے خواب مودی کا خواب ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے ملک کو بڑے گھوٹالوں اور دہشت گردی کے حملوں سے نجات دلائی، اور غریب اور متوسط طبقے کے معیار زندگی کو بہتر بنانے کی کوششیں کیں۔ سی این آئی کے مطابق بی جے پی کے قومی کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم نریندر مودی نے کہا کہ میں تیسری میعاد سیاسی فائدے کیلئے نہیں بلکہ ہندوستان کے فائدے کیلئے چاہتا ہوں ۔ وزیر اعظم مودی نے کہا کہ ملک کو اب بڑے خواب دیکھنا ہوں گے اور 2047 تک ہندوستان کو ایک ترقی یافتہ ملک بنانے کے لیے بڑے عزم کرنا ہوں گے۔انہوں نے کہا ’’اگلے پانچ سال انتہائی اہم ہونے جا رہے ہیں۔ ہمیں ’وکست بھارت‘ کی طرف ایک بڑی چھلانگ لگانی ہے۔ پہلی ضرورت بی جے پی کی مضبوط تعداد میں اقتدار میں واپسی کو یقینی بنانا ہے‘‘ ۔ انہوں نے کہا کہ کروڑوں خواتین، غریبوں اور نوجوانوں کے خواب مودی کا خواب ہیں۔ انہوںنے کہا ’’ہم نے ملک کو بڑے گھوٹالوں اور دہشت گردی کے حملوں سے نجات دلائی، اور غریب اور متوسط طبقے کے معیار زندگی کو بہتر بنانے کی کوششیں کیں۔ ‘‘ انہوں نے کہا کہ وہ تیسری مدت اقتدار کے مزے لینے کیلئے نہیں بلکہ قوم کیلئے کام کرنے کیلئے چاہتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اگر میں اپنے گھر کا سوچتا تو کروڑوں لوگوں کے لیے گھر بنانا ممکن نہ ہوتا۔انہوں نے کہا کہ 10 سال کی بے داغ حکمرانی اور 25 کروڑ لوگوں کو غربت سے نکالنا کوئی معمولی کارنامہ نہیں تھا۔انہوں نے کہا ’’’یک سینئر لیڈر نے ایک بار مجھ سے کہا کہ میں نے بطور وزیر اعظم اور وزیر اعلیٰ کافی کام کر لیا ہے، مجھے آرام کرنا چاہیے۔ لیکن میں کیلئے کام کر رہا ہوں،’راج نیتی’ کیلئے نہیں‘‘۔ وزیر اعظم نے کہا کہ وہ چھترپتی شیواجی مہاراج کے نظریات کے مطابق رہتے ہیں اور ان سے تحریک لیتے ہیں۔ ’’میں وہ نہیں ہوں جو اپنی خوشی کے لیے جیتا ہوں۔ میں سیاسی فائدے کے لیے نہیں بلکہ ہندوستان کے فائدے کے لیے بی جے پی کے لیے تیسری مدت کے لیے وکالت کر رہا ہوں۔ میری کوششیں ہندوستان کے لوگوں کے لیے وقف ہیں۔ ہندوستانیوں کے خواب میرے وعدے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وہ پہلے وزیر اعظم ہیں جنہوں نے بیت الخلاء کا مسئلہ اٹھایا اور لال قلعہ سے خواتین کے وقار کی بات کی۔ مودی نے کہا کہ بی جے پی نوجوانوں، خواتین، کسانوں اور نوجوانوں کی طاقت کو وکست بھارت کی تعمیر میں اکٹھا کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ’’ہم نے ان لوگوں سے پوچھا جن کو کسی نے تسلیم نہیں کیا اور صرف اتنا ہی نہیں ہم نے ان کی عبادت بھی کی ہے‘‘۔انہوں نے یہ بھی کہا کہ بی جے پی نے لوگوں کے پانچ صدیوں کے انتظار کو ختم کیا اور ایودھیا میں رام مندر کی تعمیر کی۔ گجرات کے پاوا گڑھ میں 500 سال بعد مذہبی پرچم لہرایا گیا ہے۔ سات دہائیوں کے بعد ہم نے کرتارپور صاحب شاہراہ کھول دی۔ سات دہائیوں کے انتظار کے بعد ملک کو آرٹیکل 370 سے آزادی ملی ہے۔ وزیر اعظم نریندر مودی نے کانگریس کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ سرحد پار سرجیکل سٹرائکس کے بعد ہماری مسلح افواج سے سوال کیا گیا جب فضائی حملے کیے گئے تو انہوں نے ثبوت مانگے۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس نے صرف ہمارے کاموں پر سوال اٹھائیں اور ملک کے فائدہ کیلئے جو کام کیا گیا اس کی تنقید کی گئی ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں