Images (5)

مرکزی وزارت داخلہ نے ’’مسلم لیگ ‘‘جموں کشمیر پر اگلے پانچ برسوں کیلئے پابندی لگائی ہے

نظر بندمسرت عالم کی سرپرستی میں چلائی جانے والی مسلم لیگ پر ملک دشمن سرگرمیوں میں ملوث ہونے کاالزام

سرینگر//جموں کشمیر میں ایک اور اعلیحدگی پسند جماعت ’’مسلم لیگ ‘‘ جو نظر بند مسرت عالم بٹ کی قیادت میں چلائی جارہی تھی کو ممنوعہ قراردیتے ہوئے اسے پر اگلے پانچ برسوں تک پابندی لگائی گئی ہے ۔ وزارت داخلہ نے اس ضمن میں کہا ہے کہ مسلم لیگ جموں کشمیر ملک کے خلاف پروپگنڈا اور لوگوں کو مشتعل کرنے جیسے جرائم میں ملوث پائی گئی ہے ۔ مرکز نے بدھ کے روز مسلم لیگ جموں و کشمیر کو جس کی قیادت جیل میں بند علیحدگی پسند رہنما مسرت عالم بٹ کررہے ہیں کو ‘غیر قانونی جماعت قرار دیا اور یو اے پی اے کے تحت اس پر 5 سال کے لیے پابندی لگا دی۔وزارت داخلہ نے بتایا ہے کہ یہ تنظیم اور اس کے ارکان ملک دشمن اور علیحدگی پسند سرگرمیوں میں ملوث ہیں جو دہشت گرد سرگرمیوں کی حمایت کرتے ہیں اور لوگوں کو جموں و کشمیر میں اسلامی حکومت قائم کرنے کے لیے اکساتے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ مسلم لیگ جموں کشمیر یو اے پی اے کے تحت ایک ‘غیر قانونی ایسوسی ایشن’ قرار دیا گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ پی ایم مودی کی قیادت والی حکومت کا پیغام بلند اور واضح ہے کہ جو بھی ملک کے اتحاد، خودمختاری اور سالمیت کے خلاف کام کرے گا اسے بخشا نہیں جائے گا اور اسے قانون کے مکمل کارروائی کا سامنا کرنا پڑے گا۔واضح رہے کہ سال 2019میں مرکزی سرکار کی جانب سے جماعت اسلامی جموں کشمیر اورلبریشن فرنٹ کو ممنوعہ جماعت قراردیتے ہوئے ان کی تمام سیاسی اور سماجی سرگرمیوں پر پابندی لگانے کااعلان کیا تھا اور اس کے ساتھ ساتھ ان جماعتوں کے اثاثوں کومنجمد کیاگیا اور ان کے ارکان اور لیڈران کو گرفتارکرکے انہیں پابندسلاسل بنادیا گیا تھا ۔ اب مرکزی سرکار نے مسرت عالم کی سرپرستی میں چلائی جانے والی ’’مسلم لیگ‘‘ جموں کشمیر کو غیر قانونی قراردیتے ہوئے اس پر اگلے پانچ برسوں تک پابندی لگائی ہے ۔ مرکزی وزارت داخلہ نے کہا ہے کہ مسلم لیگ جموں کشمیر میں بھارت مخالف سازشوں ، لوگوں کو اُکسانے اور ملک کے خلاف پروپگنڈا کرنے جیسے جرائم میں ملوث پائی گئی ہے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں