Download (13)

دیوسر کولگام میں بجلی کی بار بار کٹوتی سے صارفین پریشان

تنگ آمد بہ جنگ آمد کے مصداق خواتین و مرد سراپا احتجاج

سرینگر//دیو سر کولگام میں محکمہ بجلی کے خلاف سخت برہمی اور ناراضگی کااظہار کرتے ہوئے صارفین نے کہا کہ غیر اعلانیہ کٹوتی کی وجہ سے انہیں شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے جبکہ بجلی فیس میں اضافہ کے باوجود بھی معقول بجلی فراہم کرنے میں محکمہ ناکام ہوچکا ہے ۔ وائس آف انڈیا کے نمائندے غلام نبی کھانڈے کے مطابق جنوبی کشمیر کے کولگام ضلع کے دیوسر کے کلیم علاقے کے رہائشیوں نے منگل کو سڑکوں پر نکل کر سڑک بلاک کر کے علاقے میں بجلی کی غیر اعلانیہ بندش کے خلاف احتجاج کیا۔مظاہرین کا کہنا تھا کہ وہ بجلی کی غیراعلانیہ بندش کی وجہ سے پریشانی کا شکار ہیں اور اس کے بدلے میں “زیادہ قیمت” ادا کر رہے ہیں۔پاس ایک وقت میں ایک گھنٹے سے زیادہ بجلی نہیں ہے۔ بندش ہماری زندگیوں کو جہنم بنا رہی ہے، اور حکام خاموش تماشائی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت ہر ماہ ’’بھاری رسیدیں‘‘ بھیجتی ہے لوگوں نے وائس آف انڈیا کے نمائندے غلام نبی کھانڈے کو بتایا کہ پی ڈی ڈی حکام کو بار بار درخواست کرنے کے باوجود ابھی تک کچھ نہیں کیا گیا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ متعلقہ حکام کی بے حسی نے مکینوں کو احتجاج کرنے پر مجبور کر دیا ہے۔انہوں نے کہا کہ طویل کٹوتیوں کی وجہ سے طلباء کی پڑھائی متاثر ہو رہی ہے۔اس ضمن میں جب اسسٹنٹ ایگزیکٹو انجینئر سب ڈویژن قاضی گنڈ محمد یوسف میر سے رابطہ کیا گیا تو انہوں نے کہا کہ شدید لوڈ شیڈنگ کے نتیجے میں بار بار کٹوتی ہوتی ہے۔ اگر گاہک دانشمندی سے بجلی کا استعمال کرتے ہیں تو بجلی کی غیر مقررہ بندش نہیں ہوگی،‘‘ انہوں نے کہاکہ کیلم فیڈر پر لوڈ 400 ایم پی ایس تک پہنچ گیا ہے، جو پہلے کبھی نہیں پہنچا تھا۔ ہم لوگوں سے گزارش کرتے ہیں کہ بجلی کا استعمال دانشمندی سے کریں تاکہ ان کی خدمت کرنے میں کوئی پریشانی نہ ہو۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں