Ig Kashmir

دشمنوں کے عزائم ناکام بنائیں گے:آئی جی پی کشمیر

آئی جی پی کشمیرکا دورۂ بڈگام، سیکورٹی جائزہ میٹنگ کا انعقاد

سماجی جرائم اور منشیات فروشوں کیخلاف سخت کارروائی کی ہدایت
سرینگر //آئی جی کشمیر ودھی کمار بردی نے بڈگام ضلع کا دورہ کیا اور وہاں پر سیکورٹی صورتحال کا ایک اعلیٰ سطحی میٹنگ کے دوران جائزہ لیا۔آئی جی کشمیر کے ہمراہ ڈی آئی جی سینٹرل کشمیر سوجیت کمار اور ایس ایس پی بڈگام شری الطاہر گیلانی اور ضلع کے دیگر سینئر آفیسران بھی موجود تھے۔ آئی جی پی کے دورے کا مقصد ضلع میں سیکیورٹی اور جرائم سے متعلق میکانزم کی نگرانی اور اسے بہتر بنانا مقصود ہے۔میٹنگ کے دوران آئی جی پی نے پرامن معاشرے کی تشکیل کے لیے سیکیورٹی اور جرائم کے طریقہ کار کو اوور ہال کرنے کو اولین ترجیح دی۔میٹنگ کے دوران آئی جی کشمیر نے منشیات کی لعنت کے خلاف زیرو ٹالرنس کی پالیسی پر زور دیا اور منشیات کی اسمگلنگ کے مسئلے سے نمٹنے اور ضلع میں امن و امان برقرار رکھنے کے لیے دکانداروں کے خلاف سخت کارروائی پر زور دیا۔مزید برآں، آئی جی پی کشمیر نے تحقیقات کی اہمیت پر زور دیتے ہوئے زیر التواء مقدمات کے فوری حل پر زور دیا۔ انہوں نے عوامی مرکز کے نقطہ نظر کو اپناتے ہوئے اور خدمت پر مبنی پولیسنگ کی وکالت کرتے ہوئے پولیس اور عوام کے تعلقات کو مضبوط کرنے کی ضرورت پر بھی زور دیا کیونکہ اس طرح کے نقطہ نظر سے پولیس اور عوام کے درمیان اعتماد پیدا ہوتا ہے اور خلیج کو کم کرنے میں مدد ملتی ہے۔شری بردی نے کہا کہ سماج دشمن عناصر کے مذموم عزائم کو ناکام بنانے کے لیے اختراعی طریقہ کار پر عمل کرنے کی ضرورت ہے۔ بہتر عوامی تعاون اور مختلف سطحوں پر نگرانی کے ساتھ افواج کے درمیان ہم آہنگی خطے میں قیام امن کے لیے ہماری کوششوں کے بہتر نتائج برآمد کرے گی۔ انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ ہماری کوششوں کو نتیجہ خیز بنانے کے لیے عوام کا تعاون ضروری ہے جس کے لیے ہمیں عوامی شکایات کے ازالے کے لیے نچلی سطح پر پولیس اور پبلک بانڈز کو مضبوط کرنا ہوگا۔علاوہ ازیں آئی جی پی کشمیر نے ایک مضبوط سیکورٹی گرڈ کی ضرورت کو اجاگر کیا اور افسران پر زور دیا کہ وہ زمینی ایجنسیوں کے درمیان تال میل کو بڑھا دیں۔ اس فعال نقطہ نظر کا مقصد انسداد دہشت گردی گرڈ کو مضبوط کرنا، مخصوص انٹیلی جنس پیدا کرنا اور ضلع میں امن و استحکام کے لیے کارروائیوں کو تیز کرنا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں