Download

جموں کشمیر انتظامیہ تمام لوگوں کو معیاری ، سستی اور قابل رسائی طبی خدمات فراہم کرنے کیلئے پر عزم ۔ ایل جی

ہم نے چار اہم پہلوؤں پر خصوصی توجہ دی ہے ۔ ڈاکٹر، ادویات، تشخیص اور ترسیل کا طریقہ کار
ہم نے صحت کے فرق کو ختم کرنے میں بڑی کامیابی حاصل کی

سرینگر//لیفٹیننٹ گورنرمنوج سنہا نے سنیچروارکو پونچھ اور راجوری میں روٹری کلب کے زیر اہتمام میگا ہیلتھ کیمپ کی اختتامی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے لیفٹیننٹ گورنر نے جموں و کشمیر انتظامیہ کے تمام لوگوں کو معیاری، سستی اور قابل رسائی صحت کی دیکھ بھال کی خدمات فراہم کرنے کے عزم کا اعادہ کیا۔لیفٹیننٹ گورنر نے مشاہدہ کیا کہ وزیر اعظم نریندر مودی جی کی رہنمائی میں، ہم نے یوٹی میں صحت کے فرق کو ختم کرنے میں بڑی کامیابی حاصل کی ہے۔انہوں نے کہا کہ جدید ترین صحت کے بنیادی ڈھانچے، ڈیجیٹل مداخلتوں، طبی تعلیم کے شعبے میں متعارف کرائی گئی اصلاحات اور اہم دیکھ بھال نے جموں کشمیر کے صحت کی دیکھ بھال کے ماحولیاتی نظام کو مضبوط کیا ہے۔ہم نے چار اہم پہلوؤں پر خصوصی توجہ دی ہے ۔ ڈاکٹر، ادویات، تشخیص اور ترسیل کا طریقہ کار۔ لیفٹیننٹ گورنر نے مزید کہا کہ صحت اسکیم کے تحت، انتظامیہ نے جنوری 2024 کے پہلے ہفتے تک شہریوں کے علاج پر کل 1735 کروڑ روپے خرچ کیے ہیں۔لیفٹیننٹ گورنر نے سیکرٹری صحت اور سینئر حکام کو ٹیلی ماناس جیسی سہولیات اور ہسپتالوں اور صحت کے مراکز میں ڈاکٹروں کی دستیابی کے بارے میں بڑے پیمانے پر بیداری پھیلانے کی ہدایت کی۔ ایمبولینس سروس کے فوری رسپانس کو یقینی بنانے کے لیے ادارہ جاتی طریقہ کار وضع کیا جانا چاہیے، خاص طور پر دور دراز کے علاقوں میںعملہ اور ایمبولینسوں کو متحرک رکھا جانا چاہئے ۔لیفٹیننٹ گورنر نے ملک کے مختلف حصوں سے تعلق رکھنے والے اعلیٰ تربیت یافتہ ماہرین کے سرجیکل علاج کے اختیارات کی مکمل رینج فراہم کرنے اور سرحدی اضلاع کے دور دراز علاقوں میں ایک ہفتہ تک چلنے والے ہیلتھ کیمپ کے دوران 600 سے زائد سرجریوں اور لوگوں کو فائدہ پہنچانے میں نمایاں شراکت کی تعریف کی۔ لیفٹیننٹ گورنر نے کہا کہ ’’میں اپنے ڈاکٹروں اور روٹری کلب کے ممبران کو لوگوں کے لیے وقف اور بے لوث خدمات کے لیے سلام پیش کرتا ہوں‘‘۔انہوں نے محکمہ صحت کی طرف سے لاجسٹک فراہم کرنے اور ضلعی انتظامیہ کی طرف سے ہر طرح کے تعاون اور تعاون کو سراہا۔ انہوں نے کہا کہ مشترکہ کوششوں نے اس بات کو یقینی بنایا ہے کہ راجوری اور پونچھ کے لوگ بغیر کسی مالی بوجھ کے خصوصی سرجری کے فوائد حاصل کر سکتے ہیں۔انہوں نے روٹری کلب پر زور دیا کہ وہ ڈوڈہ اور کشتواڑ کے لوگوں کے لیے اسی طرح کا خصوصی ہیلتھ کیمپ منعقد کرے۔ڈاکٹروں، نرسنگ سٹاف، روٹری کلب کے ممبران اور محکمہ صحت کے افسران کی ٹیم سے خطاب کرتے ہوئے لیفٹیننٹ گورنر نے جموں و کشمیر انتظامیہ کے تمام لوگوں کو معیاری، سستی اور قابل رسائی صحت کی دیکھ بھال کی خدمات فراہم کرنے کے عزم کا اعادہ کیا۔لیفٹیننٹ گورنر نے مشاہدہ کیا کہ وزیر اعظم نریندر مودی جی کی رہنمائی میں، ہم نے یوٹی میں صحت کے فرق کو ختم کرنے میں بڑی کامیابی حاصل کی ہے۔انہوں نے کہا کہ جدید ترین صحت کے بنیادی ڈھانچے، ڈیجیٹل مداخلتوں، طبی تعلیم کے شعبے میں متعارف کرائی گئی اصلاحات اور اہم دیکھ بھال نے جموں کشمیر کے صحت کی دیکھ بھال کے ماحولیاتی نظام کو مضبوط کیا ہے۔ہم نے چار اہم پہلوؤں پر خصوصی توجہ دی ہے ۔ ڈاکٹرز، ادویات، تشخیص اور ترسیل کا طریقہ کار۔ لیفٹیننٹ گورنر نے مزید کہا کہ صحت اسکیم کے تحت، انتظامیہ نے جنوری 2024 کے پہلے ہفتے تک شہریوں کے علاج پر کل 1735 کروڑ روپے خرچ کیے ہیں۔لیفٹیننٹ گورنر نے سیکرٹری صحت اور سینئر حکام کو ٹیلی ماناس جیسی سہولیات اور ہسپتالوں اور صحت کے مراکز میں ڈاکٹروں کی دستیابی کے بارے میں بڑے پیمانے پر بیداری پھیلانے کی ہدایت کی۔ ایمبولینس سروس کے فوری رسپانس کو یقینی بنانے کے لیے ادارہ جاتی طریقہ کار وضع کیا جانا چاہیے، خاص طور پر دور دراز کے علاقوں میںعملہ اور ایمبولینسوں کو متحرک رکھا جانا چاہئے ۔اس موقع پر ہیلتھ کیمپ سے مستفید ہونے والوں کے لواحقین نے بھی اپنے تجربات بیان کیے اور ڈاکٹرز، روٹری کلب اور انتظامیہ کا شکریہ ادا کیا۔ڈاکٹر سید عابد رشید شاہ سیکرٹری ہیلتھ اینڈ میڈیکل ایجوکیشن۔ ایس ایچ اوم پرکاش بھگت، ڈپٹی کمشنر راجوری؛ چودھری. محمد یاسین، ڈپٹی کمشنر پونچھ؛ روٹری کلب کے ارکان؛ پرنسپل جی ایم سی راجوری، ایچ او ڈیز، ڈاکٹرس، نرسنگ اسٹاف اور سینئر افسران موجود تھے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں