بھارت میں 2027تک ’’رام راجیہ ‘‘ قائم ہوگا

وزیر اعظم کی قیادت میں بھارت تیزی سے ترقی کررہا ہے ۔ وزیر دفاع
Images (3)
سرینگر/15مارچ /و ی او آئی//وزیر دفاع راجناتھ سنگھ نے جمعہ کے روز زور دیکر کہاکہ بھارت میں ’’رام راجیہ ‘‘ قائم کرنا اب ممکن ہوجائے گا اور 2027تک بھارت دنیا کی تیسری بڑی طاقت بن کر اُبھر کر آنے کے ساتھ ہی ملک میں رام راج قائم کیا جائے گا۔ انہوںنے بتایا کہ وزیر اعظم کی قیادت میں ملک ترقی کی طرف بڑھ رہا ہے اور حزب اختلاف کی جماعتوں کو یہ بات ہضم نہیں ہورہی ہے ۔ وائس آف انڈیا کے مطابق وزیر دفاع راج ناتھ سنگھ نے جمعہ کو زور دے کر کہا کہ وہ دن دور نہیں جب ہندوستان میں ‘رام راجیہ’ قائم ہو جائے گا، جو 2027 تک دنیا کی تین سب سے بڑی معیشتوں میں شامل ہو جائے گا۔انہوں نے شہریت (ترمیمی) ایکٹ یا سی اے اے کے نفاذ پر بی جے پی کو فرقہ وارانہ قرار دینے والوں پر بھی تنقید کی اور یہ جاننے کا مطالبہ کیا کہ کن حالات میں پاکستان میں ہندوؤں کی آبادی تقریباً 23 فیصد سے کم ہو کر 3 فیصد رہ گئی۔ریاستی دارالحکومت رانچی سے تقریباً 160 کلومیٹر کے فاصلے پر واقع اتخوری میں ایک ریلی سے خطاب کرتے ہوئے سنگھ نے کہا، ’’ایودھیا مندر کی تقدیس کے ساتھ ہی ہندوستان میں رام راجیہ قائم ہوگا… رام للا اپنی جھونپڑی سے اپنے محل میں پہنچے ہیں۔‘‘انہوں نے کہا کہ ’’بھارت وزیر اعظم نریندر مودی کی قیادت میں ان کی طرف سے کئے گئے ترقیاتی کاموں کی پشت پر ‘وشو گرو’ (عالمی رہنما) بنے گا اور بھگوان کی خواہش ہے کہ وہ نہ صرف تیسری بار بلکہ چوتھی بار بھی وزیر اعظم رہیں۔ سی اے اے پر انہوں نے کہا، اقلیتوں بشمول ہندو، سکھ، عیسائی اور پارسی، افغانستان، بنگلہ دیش اور پاکستان جیسے ممالک میں مذہبی ظلم و ستم کا سامنا کر رہے ہیں اور پناہ کے لیے ہندوستان آ رہے ہیں۔انہوں نے کہاکہ ہم نے انہیں شہریت دینے کا فیصلہ کیز۔بی جے پی کو اس کے لیے فرقہ پرست قرار دیا گیا ہے۔‘‘جھارکھنڈ کے سابق وزیر اعلیٰ ہیمنت سورین پر تنقید کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ہندوستان کی تاریخ میں یہ بے مثال ہے کہ ایک وزیر اعلیٰ لاپتہ ہوا لیکن اب وہ بدعنوانی کے الزام میں سلاخوں کے پیچھے ہیں۔سنگھ نے کہا’کوئی بھی کانگریس کی سابقہ حکومتوں کے برعکس بدعنوانی پر بی جے پی حکومت پر انگلی نہیں اٹھا سکتا‘‘۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں