Download (8)

’’اپوزیشن پارٹیاں سال 2024 کے لوک سبھا انتخابات میں بھی کم طاقت کے ساتھ اپوزیشن میں ہی رہے گی ‘‘

بدقسمتی سے، میں جو دیکھ رہا ہوں وہ یہ ہے کہ اپوزیشن انتخابات میں ہارنے کی اپنی مایوسی کو باہر نکال رہی ہے
وہ حکومت کو ہٹانے کیلئے جبکہ ہم ہندوستان کی بہتری کیلئے اپنی طاقت کا استعمال کر رہے ہیں/ وزیر اعظم مودی

سرینگر // اپوزیشن پارٹیاں سال 2024 کے لوک سبھا انتخابات میں بھی کم طاقت کے ساتھ اپوزیشن میں ہی رہے گی کا دعویٰ کرتے ہوئے وزیر اعظم نریندر مودی نے کہا کہ بدقسمتی سے، میں جو دیکھ رہا ہوں وہ یہ ہے کہ اپوزیشن انتخابات میں ہارنے کی اپنی مایوسی کو باہر نکال رہی ہے اور اس پورے واقعے کو سیاسی رنگ دے رہی ہے۔ اپوزیشن پارٹیوں پر پارلیمنٹ میں سیکورٹی کی خلاف ورزی کے واقعہ کو ’’خاموش اور بالواسطہ‘‘حمایت فراہم کرنے کا الزام لگاتے ہوئے وزیر اعظم نریندر مودی نے زور دے کر کہا کہ وہ اپنے طرز عمل کی وجہ سے سال 2024 کے لوک سبھا انتخابات میں مزید کم تعداد کے ساتھ اپوزیشن میں رہیں گے۔پارلیمنٹ کی کارروائی میں خلل ڈالنے کے لئے اپوزیشن جماعتوں پر تنقید کرتے ہوئے وزیر اعظم مودی نے کہا کہ وہ حالیہ اسمبلی انتخابات میں اس کے نقصانات پر مایوسی میں اس واقعہ کو ’’سیاسی گھماو‘‘ دے رہے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ ان کا مقصد ان کی حکومت کو گرانا ہے لیکن حکومت کا مقصد ہندوستان کے روشن مستقبل کو یقینی بنانا ہے۔انہوں نے کہا کہ ’’کچھ لوگ بی جے پی کو اقتدار سے ہٹانے کے اپنے ارادے میں متحد ہو رہے ہیں جبکہ ہم محب وطن ہیں اور ہندوستان کی بہتری کیلئے کام کر رہے ہیں۔ وہ حکومت کو ہٹانے کے لیے اپنی طاقت کا استعمال کر رہے ہیں جب کہ ہم ہندوستان کی بہتری کیلئے اپنی طاقت کا استعمال کر رہے ہیں‘‘۔ وزیر اعظم مودی نے زور دے کر کہا کہ پارلیمنٹ میں اپوزیشن کا طرز عمل اس بات کو یقینی بنائے گا کہ سال 2024 کے لوک سبھا انتخابات میں ان کی تعداد میں مزید کمی آئے گی جبکہ بی جے پی اپنی تعداد کو بڑھا رہی ہے۔ آڈیٹوریم میں کچھ خالی قطاروں کی طرف اشارہ کرتے ہوئے جہاں تمام بی جے پی ممبران پارلیمنٹ نے جمع کیا تھا، انہوں نے کہا کہ یہ 2024 کے انتخابات کے بعد بھری جائیں گی۔انہوں نے کہا ’’بدقسمتی سے، میں جو دیکھ رہا ہوں وہ یہ ہے کہ اپوزیشن انتخابات میں ہارنے کی اپنی مایوسی کو باہر نکال رہی ہے اور اس پورے واقعے کو سیاسی رنگ دے رہی ہے۔ حتیٰ کہ وہ اس کی خاموش اور بالواسطہ حمایت بھی کر رہی ہے جو کہ تشویشناک ہے۔ واقعے کی حمایت کر رہی ہے۔ اور ایسی باتیں کہنا کہ وہ اور کیا کر سکتے تھے تشویشناک اور قابل مذمت ہے‘‘۔ مودی نے کہا کہ ان جماعتوں کا طرز عمل واضح طور پر اس بات کی نشاندہی کرتا ہے کہ انہوں نے اپوزیشن میں رہنے کا ذہن بنا لیا ہے اور وہ اس کے لیے مشق کر رہے ہیں، انہوں نے مزید کہا کہ قوم نے بھی انہیں وہاں رکھنے اور ان کی طاقت کو مزید کم کرنے کا ذہن بنا لیا ہے۔مودی نے بی جے پی ممبران پارلیمنٹ سے کہا کہ وہ تحمل کا مظاہرہ کریں اور جمہوری اصولوں پر عمل کریں۔انہوں نے کہا کہ ہمیں اپنی آواز کو قابو میں رکھنے اور جمہوریت کی حدود میں رہنے کے لیے اپوزیشن کو ذہن میں رکھتے ہوئے بے نقاب کرنا چاہیے۔ آنے والے دنوں میں اس بات سے کوئی فرق نہیں پڑتا کہ دوسرے لوگ حصہ لے رہے ہیں یا نہیں، ہمیں پارلیمنٹ کی کارروائی میں ضرور حصہ لینا چاہیے۔ دونوں ایوانوں میں اہم بلوں پر بحث ہو رہی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں